سمندر میں سمت شناسی

تحریر مجید بھا

ھم جب بات کر ھیں سمندروں میں قدیم مایگیری یا سمندر میں سفر مال بردار کشتیوں کا تو گہرے
پانیوں میں سر پر آسمان ھوگا اور نیچے پانی جس پرچلتی ھوئ کشتی اور دور دور تک کسی کنارے کا نام ونشان تک نہ ھوگا اس زمانے میں نا جدید آلات تھے اور نہ سائنس نے اتنی ترقی کی تھی مگر ستاورں کی مدد سے سفر بھی کرتے اور موسم کا بھی پتہ چلتا تھا تو دوستوں آج ھم (کنڈیوں) ستاروں کے بارے میں بات کرینگے ان کی تعداد 40ستارے ھوتے ھیں اورانکی شکل مچھلی والی ڈور کے کاٹے جیسی ھوتی ھے جسکو مایگیر کلو یا کنڈی کہتے ھیں اسلئے ان ستاروذں کو مایگیر (کنڈیوں) ستاروں کے نام سے جانتے ھیں اور یہ سائس میں کافی بڑی ھوتی ھے اسلئے10نومبر کو مغرب نماز کے بعد ایک ستارہ نظر نہیں آئیگا دوسرے دن دوسرا ستارہ اسطرح چالیس دن میں چالیس ستارے مغرب کے بعد نظرنہیں آینگے اور 20 دسمبر کو فجر نماز سے پہلے ایک ستارا نظر آئیگا دوسرے دن دوسرا اسطرح 40 دن میں پوری (کنڈیوں) نظر آنےلگیں گی مگر(کنڈیوں) ستاروں کے بارے میں مایگیروں میں اختلافات موجود ھیں کے جو ستارے اوپر سے نیچے کی طرف لائن میں ھیں ھو تے ھیں روزانہ ایک ستارہ نظر آتاھے مگر جو ستارے جنوب اور شمال کی لائن میں ھیں وہ تین ایک ساتھ بھی نظر آتے ھیں اسلئے30دن میں پورے نظر آجاتے ھیں دوسری بات یہ ھے کے ستارے 38ھیں باقی چالیس دن کے بعد نظر آتے اس بات پر سب مطفق ھیں (کنڈیوں)ستاروں کاموسم اور سمندر پر اثرات جیسے پہلا ستارہ نظر آئیگا سردی آہستہ آہستہ بڑ جائیگی اس دوران برسات کا امکان بھی رھتاھے مشرق سے سرد اور خشک ھوایں چلنے لگی ھیں شروع کے دنوں میں سردی خشکی پر ھوگی جب کنڈیوں ستارے کے آخری ستارے نظر آنے لگے تو سردی پانی میں زیادہ ھوگی مایگیر اپنی زباں میں کہے ینگے پہلے سردی انسانوں اور زمین پر اب سمندر کے پانی اور مچھلیوں پراور پا نی ٹھنڈا ھونے کی وجہ سے مچھلیاں گہرائی میں چلی جاینگی مایگیروں کو شکار بہت کم ملے گا نوٹ زیادہ سردی یا زیادہ گر می دونوں صورتوں میں مچھلیاں گہرائی میں جاتی ھیں کیونکہ کم گہرائی والا پانی گرمیوں میں گرم اور سردیوں میں سرد ھوتا ھے جس کی وجہ سے مچھلیاں گہرائی کا رخ کرتی ھیں

Leave a Reply